عفاف اظہر کی کتاب ”خیال جو حرزِ جاں ہوئے “ کی شاندار تقریبِ رونمائی،شہر کے ممتاز ادیب و شعراء کی موجودگی نے محفل کو گرمادیا

کینیڈا ، مسسی ساگا (خصوصی رپورٹ )مقامی اردو اخبار اور فیملی آف دی ہارٹ کے زیرِ اہتمام عفاف اظہر کی کتاب ”خیال جو حرزِ جاں ہوئے “ کی تقریبِ رونمائ مقامی ہال میں منعقد ہوئی۔ 1ہفت روزہ جنگ کینیڈا اور ادبی،ثقافتی تنظیم فیملی آف دی ہارٹ کی باہمی تعاون کے ساتھ منعقدہ اس تقریب نے شہر کی ادبی روایات میں ایک نئی طرح ڈال دی ہے۔ ہفت روزہ نےاعلان کردیا ہے کہ اب وہ شہر کےان لکھاڑیوں کو سامنے لائے گا جو ادبی گروپ بندیوں کی وجہ سے خاموش زندگی گذاررہے ہیں۔ ساتھ ہی ساتھ شہر میں فیملی پروگراموں میں اچھے آئیڈیاز کے ساتھ نئے انداز کے پروگرام ترتیب دےگا۔ عفاف اظہر کی کتاب ”خیال جو حرزِ جاں ہوئے “ کی تقریبِ رونمائ کی صدارت ممتاز افسانہ نگار،شاعر و دانشور ڈاکٹر خالد سہیل نے کی۔ مہمانانِ خصوصی مقبول شاعر حمایت علی شاعر اور واشنگٹن سے آئے ہوئے ادیب و کالم نگار ظہور ندیم تھے۔ پروگرام کی کمپئرنگ ممتاز صحافی اور مزاح نگار مرزا یاسین بیگ نے اپنے مخصوص طنزیہ مزاحیہ انداز میں کی اور اپنے طنزیہ و مزاحیہ جملوں سے حاضرین کے دل موہ لیئے۔ کتاب کے پرنٹر کراچی کے نوجوان لکھاڑی افضال احمد نے کراچی سے اپنے بھیجے گئے تبصرے میں کہا کہ عفاف اظہر کی تحریریں لفظوں کی ملمع کاری سے پاک ہر دل کی آواز ہے۔ یہی وجہ ہے کہ پاکستان بھر میں ان کی کتاب ہاتھوں ہاتھ بک گئی۔ وہ فیس بک کے ذریعے دنیا بھر میں پڑھی جاتی ہیں ۔ کتاب پر گفتگو کرتے ہوئے نقاد و افسانہ نگار بلند اقبال نے کہا کہ پدرانہ اور مردانہ حاکمیت کو جس طرح (more…)