حفاظت

(dot)comمیرا پیارا پاکستان اب ایک ایسی بس کی مانند ہوگیا ہے جس پر لکھا ہوتا ہے ”سواری اپنے سامان کی خود حفاظت کرے۔“

جنسی ہیجان

Lost-640x480پاکستان میں جنسی ہیجان اس قدر بڑھ چکا ہے کہ اگر کسی حادثے کا شکار، خون زیادہ بہ جانے کے نتیجے میں سڑک پر پڑی لڑکی کہے کہ ”میں ٹھنڈی ہورہی ہوں“ ۔۔۔۔ تو جائے حادثے پر کھڑا تماشائیوں کا ہجوم یک ذہن ہوکر سوچ رہا ہوگا کہ اس لڑکی کو جنسی طور پر گرم کیسے کیا جائے؟ اب ایسے معاشرے پر لعنت نہ بھیجی جائے تو اور کیا،کیا جائے؟

ذلّت

سعادت حسن منٹو کو فحش افسانہ نگار قرار دے کر اگر ہم نے عدالتوں میں نہ گھسیٹا ہوتا تو آج پاکستانی معاشرہ اتنا جاہل،تنگ نظر،انتہا پسند،تشدد پسند نہ ہوتا،آج اس معاشرے میں عورت اور کم عمر بچیوں کو اس ذلّت کا سامنا نہ کرنا پڑتا جو اب معمول کے واقعات کہلاتے ہیں

پاکستانی دوستو جاگو

جو لوگ صرف Porn دیکھ کر پورے West کو بگڑا ہوا سمجھتے ہیں ان کی خدمت میں عرض ہے کہ Porn Industry سے وابستہ لوگوں کی تعداد آٹے میں نمک کے برابر ہے ۔ ایسے میں جاہل وہ ہیں جو آٹے کو نمک سمجھ رہے ہیں ۔ یہ ایسے ہی ہے جیسے سلطان راہی کی پنجابی فلمیں دیکھ کر یہ سمجھا جائے کہ پنجاب کا کلچر ایسا ہے۔ West انسانی نفسیات اور ضرورتوں کو سمجھتا ہے اور اپنے معاشرے کو ”پریشر ککر“ نہیں بناتا۔ West میں صورتحال یہ ہے کہ Child porn کا قانون کسی کو نہیں بخشتا،اگر کسی عورت کے ساتھ معمولی سی بھی زیادتی ہوجائے تو قانون حرکت میں آجاتا ہے،یہاں وزیروں اور اہلِ اقتدار کو عام آدمی کے توہین کی اجازت نہیں۔ وزیر اعظم بھی اگر ایک غلطی کرلے تو عوام پھر اسے کبھی ووٹ نہیں دیتی_ پاکستانی دوستو جاگو۔ اپنا غصہ ہم جیسے توجہ دلانے والوں پر نہ نکالو۔ اس غصے کا رخ اس طرف موڑو جو تمھارے آئین،قانون،عوام اور ملک کی تذلیل کررہے ہیں۔ تم ایسوں کو تو ہر بار ووٹ دے دیتے ہو، کیوں؟برا نہ ماننا! اچھائیوں اور انسانی حقوق کے معاملے میں West کا مقابلہ کرنے کیلئے ابھی پاکستانی معاشرے کو مزید سو سال درکار ہیں۔دعاگو ہوں کہ یہ مدت کم ہوجائے تاکہ ہم مرنے سے پہلے ایک خوشحال،عوام دوست پاکستان دیکھ کر جائیں

ایک ہی ونڈو

میں آج سوچ رہا ہوں کہ طالبان اور آئ ایس آئ میں کیا فرق ہے؟ سوائے سرکاری اور پرائیویٹ ہونے کے کوئ فرق نظر نہیں آتا۔ حیران کن بات یہ ہے کہ دونوں کو پے چیک بھی ایک ہی ونڈو سے ملتے ہیں۔

نظامِ ہاضمہ

999647_440462066051194_574873054_nاگر آپ کانظامِ ہاضمہ اور تولیدی نظام ٹھیک کام کررہا ہے تو سمجھ لیں دنیا کو ابھی آپ کی ضرورت ہے۔ اگر نظامِ ہاضمہ اور تولیدی نظام کے ساتھ ساتھ اعصابی نظام بھی مضبوط ہے تو قدرت آپ سے کوئ کام لینا چاہتی ہے۔

« Older Entries